ہفتہ , 17 اپریل 2021
ensdur

کے الیکٹرک کی بے حسی اور وزیر اعظم | عدنان شیخ

تحریر: عدنان شیخ

ان دنوں کراچی کے شہری گزشتہ کئی سالوں کی طرح پھر سے K_Electric کی اذیت کا شکار ہیں ۔
اس اذیت کا سفر مشرف دور آمریت میں KESC کو حکومتی تحویل سے نکال کر پرائویٹائز کردیا گیا تب سے شروع ہوا اور تاحال جاری ہے اور کب تک جاری رہتا ہے یہ اللہ ہی جانتا ہے K_Electric شہریوں سے لوٹ کھسوٹ اور خون چوس کر اب ایک خوفناک بلا کی سی صورت اختیار کرچکا ہے جس کی مثال دنیا بھر میں نہیں ملتی شائد ہی دنیا میں کوئی ایسا ادارہ اتنا مظبوط ہو جو نا ملکی قانون کی پاسداری کرے نا منتخب حکومتوں کے کسی حکم کی پاسداری کرتا ہو اور نا عدلیہ سمیت کسی بھی ادارہ کے کسی نوٹس اور تحقیقات کا پابند ہو نا ایسے بارشوں میں مرنے والے بچوں کے ورثا کے احتجاج کا کوئی اثر ہوتا ہے حالیہ K_Electric اتنا خونخوار جن ہے جو کسی کے بھی قابو نہیں آرھا یا شائد کوئی حکمران و عدلیہ سمیت کوئی ادارہ قابو کرنا بھی نہیں چاھتا پتہ نہیں کون سے ایسے راز پوشیدہ ہیں اسمیں جس کے سبب اس ملک کی معزز عدالت بھی جوکہ گزشتہ کئی سالوں سے ازخود نوٹس لینے کی وجہ سے شہرت کی حامل بنی ہیں اور آئے دن کبھی کہیں ہسپتال کا دورہ کرکے شہد اور شراب کی بوتلیں برآمد کروالیتی تھی تو کبھی انکروچمنٹ کے نام پر لوگوں سے روزگار اور انکے سر چھپانے کا سائبان چھین لیتی تھی اور ٹی وی نیوز چینلز کی مین ہیڈ لائیز میں نظر آتی ہے مگر ہماری معزز عدالتوں کو کراچی کی گرمی اور غیر اعلانیہ 18 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ میں بلکتی کراچی کی عوام نظر نہیں آتی ۔
موجودہ وزیراعظم جو دھرنوں میں عوام کو بل نا جمع کروانے اور جلانے کی اکثر ترغیب دیتے نہیں تھکتے تھے آج کراچی پر ہونے والے ظلم پر کیوں خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں حالانکہ کراچی کی ایک نشست سے تو وہ خود بھی منتخب ہوئے تھے کراچی کی غیور عوام نے آپ کو عزت بخشی تھی آپ کراچی کی عوام کے نمائندے بھی تھے مگر افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے آپ سندھ سے بغض رکھتے ہیں اور اس ہی وجہ سے آپ کراچی کو حقارت سے مسلسل نظر انداز کرتے چلے آرہے ہیں الیکشن جیتنے کے بعد سے اب تک آپ نے کبھی کراچی کو پلٹ کر نہیں دیکھا نا کبھی کراچی کا سوچا آپ کو کراچی میں رہنے والے اپنی ہی پارٹی کے لوگوں سے بھی گھن آتی ہے شائد اس ہی وجہ سے اپنے قریبی دوست اور پارٹی کے دیرینہ ساتھی مرحوم نعیم الحق کی گھر آکر تعزیت کرنا بھی گوارہ نہیں کیا اور نا ہی گزشتہ دنوں عید سے قبل طیارہ حادثے میں شہید ہونیوالے افراد سے تعزیت کے لئے آئے اور نا ہی جائے حادثہ کا دورہ کیا کیونکہ کراچی سندھ ہے اور سندھیوں سے آپ کو نفرت ہے ۔
موجودہ کرونا وائرس کی وباء میں بھی جب ساری دنیا کے حکمران اور ادارے لاک ڈاون کے زریعے اپنی عوام کو محفوظ کرنے کی کی کوشش کررہے تھے تب ہماری معزز عدالتوں اور وفاقی سیلکٹیڈ حکومت نے عوام کا درد محسوس کرتے ہوئے ازخود نوٹس لیا اور فوری طور پر سندھ حکومت کو لاک ڈاون ختم کرنے کے احکامات جاری فرمائے اور بازار کھلوادئے گئے جس کا نتیجہ آج ہم روزکروناوائرس کے باعث 100سے زائد جنازے اٹھارہے ہیں ۔
کراچی شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے اور اس گرمی میں K_Electric کی بےحسی اپنے عروج پر ہے زائد بلنگ اور اورریٹ ایوریج بلنگ کی ادائیگیوں کے باوجود کراچی اندھیروں میں ڈوبا ہوا ہے ۔
کڑروں روپے کی حکومت سے سے سبسیڈی اور نجانے کس کس مد میں اربوں روپے حکومت سے بٹورنے کے بعد کراچی سے کھربوں روپوں کےتانبے کہ تار (copper wire) تک نہیں چھوڑے اس جگہ ناقص مٹریل سے بنے سلور کے تار (silverr wire) بچھادئے گئے تاکہ ہر سال حکومتوں کو بلیک میل کرکے پیسے بٹوریں کیونکہ کراچی کی نمکین ہوا سلور کو آہستہ آہستہ کاربن بناکر کمزور کردیتی ہے اور جب لوڈ پڑےگا تو خود بلاسٹ کرکے نیچے گرنا شروع ہوجائیں گی اس نتیجہ یہ ہوگا کہ لوگو سڑکوں پر حکومت کے خلاف احتجاج کرینگے اور پھرK Electric کی بلیک میلر ٹیم حکومت سے فوری عوامی ریلیف کی مد نیں پھر سے کڑوروں اربوں روپے سمیٹے گی.

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

محکمہ داخلہ نے کالعدم ٹی ایل پی کے سربراہ سعد رضوی کا شناختی کارڈ بلاک کردیا گیا

کالعدم تنظیم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی)کے سربراہ سعد رضوی کا شناختی کارڈ بلاک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے