ہفتہ , 23 جنوری 2021
ensdur

کیا یہ سچ نہیں؟ | قربان حیدر

تحریر: قربان حیدر

(زرداری کے احسانات کو یاد کرو دوستو)

مشہور کہاوت ہے کہ آپ اپنے پڑوسی کبھی تبدیل نہیں کر سکتے پڑوسی ممالک سے اچھے تعلقات ملک اور قوم کے مفادات میں ہوتے ہیں۔ سابق صدر پاکستان اور پاکستان پیپلزپارٹی کے صدر آصف علی زرداری نے ایک طرف ایران اور دوسری طرف افغانستان کے ساتھ اچھے تعلقات بنا کر دنیا کو بتا دیا کہ ہم اچھے پڑوسی ہیں۔ آج بھی پاکستان کو ایسے لیڈر کی ضرورت ہے مگر ایسے لیڈر کی ضرورت نہیں جو اپنے پڑوسیوں کو ناراض کرے اور اپنے گھر کا بھی بیڑا غرق کر دے۔اگر آپ ملک اور قوم کا بھلا چاہتے ہیں تو بغضِ زرداری چھوڑدیں دنیا بھر میں پاکستان کو عزت دلوانی ہے تو آصف علی زرداری کا راستہ روکنا بند کریں۔اب بھی وقت ہے پاکستان پیپلز پارٹی اور عوام کے درمیان سے یہ دھمکیاں، گرفتاریاں اور ووٹ چوری کرنا یہ سب کانٹے دار تاریں ہٹادیں، گالیاں دے کر بھی دیکھ لی ہیں، جیلوں میں رکھ کر بھی دیکھ لیا اس سے ملک کا نقصان ہوا اور فائدہ کچھ نہیں ہو۔ ایسے رویے سے اگرہمارے ملک کو کوئی فائدہ ہوا ہے تو وہ ہمیں بھی بتادیں؟

آصف علی زرداری وہ محب وطن پاکستانی ہے جب پاکستان کے وقار اور عزت کی بات آئے تو امریکہ جیسے سپر پاور ملک سے بھی ٹکر کھانے میں دیر نہیں کی اور انہوں نے امریکیوں سے اڈے خالی کرواکر نیٹو سپلائی بند کرکے ان کو گھنٹے ٹیکنے پر مجبور کر دیا۔ وہ تمام ممالک کے ساتھ پاکستان کی برابری کے راستے پر گامزن تھے اور پاکستان کو برابری پر لاکر کھڑا کر کے بھی دکھایا امریکہ جو ہمیں اپنا غلام سمجھتا تھا وہ دوستی پر آگیا تھا اور امریکہ نے اپنے حکم چلانا بند کر دیئے تھے پاکستان کے آگے چلنا بندکر دیا تھا اور ساتھ ساتھ چلنا شروع کر دیا تھا، دنیا ہماری خودمختاری کی قائل ہونا شروع ہوگئی تھی۔

آصف علی زرداری کے دور میں ملک کے اندرونی حالات بھی بہت اچھی تھی سوات میں آپریشن کروا کر امن قائم کیا اور پاکستان کا پرچم جو اتر چکا تھا وہاں دبارہ پاکستان کا پرچم لہرایا،18 ویں ترمیم سے صوبوں کو طاقتور بنایا اور احساسِ محرومی ختم کی،بلوچستان کے عوام کو ان کے حقوق دلائے، پختونوں کو شناخت دے، لوگوں کو نوکریاںدیں، تنخواہوں میں خاطر خواہ اضافہ کیا، کسان خوشحالی کی راہ پر گامزن ہوگئے۔ سیلاب آنے کے باوجود بھی ملک میں اناج کی قلت نہیں ہونے دی۔یہ سب ڈھکی چھپی باتیں نہیں بلکہ عوام خود جانتے ہیں۔ یہ وہ اصل حقیقت ہے جوعوام کو نہیں بتائی جاتی بس یہ بتایا جاتا ہے کہ زرداری چور ہے، ڈاکو ہے، ملک کو کھا گیا ہے اور ملک کوتباہ کر دیا گیا ہے مگر کسی کے پاس کوئی ثبوت نہیں تھا بس اپنی دشمنیاں نکالنے کے چکروں میں ملک اور قوم کا جتنا بھی نقصان ہوا اس کا کسی کو اندازہ نہیں ہے۔

ملک اور قوم کے دشمنوں سے قوم کی ترقی ہضم نہیں ہورہی تھی اور انہوں نے قوم کو گمراہ کرنا شروع کردیا۔ آج ملک میں جو بھوک، بدحالی، بیروزگاری، مہنگائی، بدامنی ہے اورسب اچھا بتایا جا رہا ہے۔ میڈیا کو ڈنڈوں سے چلایا جا رہا ہے، میڈیا پر سب اچھا ہے والے نغمے چلوائے جا رہے ہیں اور آصف علی زرداری کے دور میں سب اچھا ہونے کے باوجود میڈیا پر سب برا کے نغمے چلوائے جاتے تھے۔ بس فرق یہ ہے کہ اب میڈیا پر سب اچھا ڈنڈے سے چلایا جا رہا ہے اور سب اچھا کے راگ الاپ رہے ہیں لیکن اس وقت میڈیا والے بھی خوشی سے یہ چلا رہے تھے کہ سب برا ہو رہا ہے۔

آصف علی زرداری کو ملک اور قوم کے ساتھ سچائی کی بڑی قیمت ادا کرنی پڑ رہی ہے وہ آج بھی کیس بھگت رہے ہیں اور بیماریوں سے بھی جنگ لڑ رہے ہیں۔

ہم گلگت بلتستان میں جہاں بھی چیرمین بلاول بھٹو زرداری کے ساتھ جاتے تو وہاں کے لوگ بڑے خوبصورت نعرہ لگاتے تھے ان میں ایک یہ بھی تھا کہ

“بھٹو کے احسان کو یاد کرو دوستو”

آج پاکستان میں بھی ایسے نعرے لگانے پڑیں گے

” زرداری کے احسانات کو یاد کرو دوستو”

وقت ضرور ثابت کرے گا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کو الیکشن میں دھاندلی سے ہرایا نہیں کیا جا سکتا بلکہ نقصان ملک اور قوم کا ہی ہوگاچاہے وہ گلگت بلتستان کے الیکشن ہوں یا پورے پاکستان کے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

وفاقی حکومت نے گزشتہ 2سال میں 5 ارب ڈالر قرض لیا، سینیٹ میں آگاہی

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے پچھلے دو سال میں  5 ارب ڈالرز کے بیرونی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے