جمعہ , 10 جولائی 2020
ensdur
CORONAVIRUS PAKISTAN
243599
  • Sindh 100900
  • Islamabad 13829
  • KP 29406
  • Punjab 85261
  • Balochistan 11052
  • GB 1619
  • AJK 1485
  • DEATH 5058

کرنل کی بیوی کی اہلکار سے بدتمیزی، اے ایس آئی اورنگزیب کی درخواست پر مقدمہ درج

رپورٹ : محمد زبیر خان

مانسہرہ پولیس کے مطابق سڑک پر ایک اہلکار سے بدتمیزی اور پولیس چیک پوسٹ کی رکاوٹیں توڑنے کے واقعے کے خلاف مقدمہ تھانہ سٹی مانسہرہ میں درج کر لیا گیا ہے

اے ایس آئی اورنگزیب کی درخواست پر درج مقدمے میں کہا گیا ہے کہ خاتون نے عام عوام کے سامنے بدتمیزی کی اور کار سرکار میں مداخلت کے ساتھ ساتھ پولیس کو دھمکیاں بھی دیں، جس کے بعد وہ گاڑی میں بیٹھ کر مجھے کچلنے کی کوشش کرتے ہوئے مانسہرہ کی طرف چلی گئیں تاہم مقدمے میں خاتون کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

پولیس کے مطابق خاتون کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارنے شروع کر دیے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان میں بدھ کی شب ٹوئٹر پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں خود کو پاکستانی فوج کے ایک افسر کی اہلیہ قرار دینے والی ایک خاتون کو سڑک پر ایک اہلکار سے بدکلامی کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔

پاکستانی فوج کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر اس معاملے کے ساتھ کسی بھی فوجی افسر کا تعلق ثابت ہوا تو ان کے خلاف محکمانہ کارروائی کی جائے گی۔

فوجی ذرائع نے تصدیق کی تھی کہ مذکورہ خاتون کے شوہر کا تعلق پاکستانی فوج سے ہے، جو لیفٹیننٹ کرنل کے عہدے پر تعینات ہیں۔

فوجی ذرائع کا کہنا ہے ’یہ ابھی طے ہونا باقی ہے کہ اپنے آپ کو مذکورہ خاتون جس فوجی افسر کی بیوی بتا رہی ہیں، اس افسر کا اس واقعے سے کوئی تعلق ہے بھی یا نہیں۔‘

فوجی ذرائع نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کے علم میں یہ سارا واقعہ لایا جا چکا ہے۔

تاہم اس سینئر فوجی افسر کا کہنا تھا کہ اس واقعے کی تحقیقات اور ذمہ داران کے خلاف کارروائی کے لیے فوجی سربراہ کی مداخلت کی ضرورت نہیں ہے۔

ان کے مطابق ’فوج میں ایسے واقعات کے بارے میں نظام موجود ہے جو حرکت میں آ چکا ہے۔‘

اس سے پہلے فوجی ذرائع نے نامہ نگار فرحت جاوید کو بتایا تھا کہ مذکورہ افسر کو بھی ستمبر 2018 میں ایک ٹریفک پولیس اہلکار سے بدتمیزی کرنے پر فرنٹیئر فورس رجمنٹ سینٹر سے باہر پوسٹ کر دیا گیا تھا۔

ہزارہ موٹر وے پر پیش آنے والے واقعے کی وائرل ہونے والی وڈیو سے متعلق پولیس ذرائع نے بتایا ہے کہ اب تک کوئی بھی ایف آئی آر درج نہیں کی گئی ہے۔

پولیس کے مطابق وڈیو میں نظر آنے والی خاتون شنکیاری کی طرف سے آئیں تھیں اور وہ ایبٹ آباد جانا چاہ رہی تھیں۔

اس سے پہلے عسکری ذرائع نے بھی اس بات کی تصدیق کی تھی کہ یہ واقعہ 20 مئی کو شام پانچ بجے کے قریب صوبہ خیبرپختونخوا میں ہزارہ ایکسپریس وے پر مانسہرہ میں پیش آیا جب یہ خاتون مانسہرہ سے شنکیاری کی جانب سفر کر رہی تھیں۔

واقعہ ضلع مانسہرہ میں تھانہ سٹی مانسہرہ کی حدود میں پیش آیا ہے۔

ڈسڑکٹ پولیس افسیر مانسہرہ صادق بلوچ کا کہنا ہے کہ جب کوئی کارروائی ہوگی تو پریس ریلیز کی ذریعے میڈیا کو اطلاع کردی جائے گئی۔

بشکریہ بی بی سی اردو

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

سنتھیا یقیناً کسی ایجنڈے پر آئی ہے: لطیف کھوسہ

سابق گورنر پنجاب، پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور وکیل لطیف کھوسہ کا کہنا ہے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے