منگل , 4 اگست 2020
ensdur
اہم خبریں

پنجاب حکومت نے پورے سسٹم کا بیڑا غرق کر دیا،چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس قاسم خان نے لاہور ہائی کورٹ میں پنجاب حکومت کی جانب سے کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو اختیارات دینے کے حوالے سے سماعت کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ پنجاب حکومت نے پورے سسٹم کا ستیاناس کر کے رکھ دیا ہے۔

پنجاب حکومت کے کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو مجسٹریٹ کے اختیارات دینے کے حوالے سے لاہور ہائی کورٹ میں ایک درخواست دائر کی گئی جس میں درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ آئین پاکستان کے مطابق انتظامیہ اور عدلیہ کے اختیارات علیحدہ علیحدہ ہیں لیکن پنجاب حکومت کی جانب سے ایک نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس میں پنجاب حکومت نے مجسٹریٹ کے اختیارات کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو دے دیے ہیں۔

درخواست گزار نے کہا کہ پنجاب حکومت کے جاری کردہ نوٹیفکیشن جس میں انہوں نے کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو مجسٹریٹ کے اختیارات دیے ہیں وہ آئین کے آرٹیکل 2 (a) اور آرٹیکل 9 کی خلاف ورزی ہے، اسی لئے لاہور ہائیکورٹ سے استدعا ہے کہ جو نوٹیفکیشن پنجاب حکومت نے 17 جون کو جاری کیا تھا اسے فوری طور پر کالعدم قرار دیا جائے، کیونکہ پنجاب حکومت کا جاری کردہ نوٹیفکیشن آئین سے متصادم ہے۔

جسٹس قاسم خان درخواست پر سماعت کرتے ہوئے پنجاب حکومت پر برہم ہوگئے اور دوران سماعت ریمارکس دیے کہ پنجاب حکومت نے عدالتوں میں تماشا سا لگا رکھا ہے، جسٹس قاسم خان نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت کو عدالتی اختیارات کا بہت شوق ہے، متعلقہ نوٹیفکیشن جس اتھارٹی کی جانب سے جاری کیا گیا ہے اور جنہوں نے اسے منظور کیا ہے ان کے خلاف توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا جائے گا۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس قاسم خان نے دوران سماعت ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اگر پنجاب حکومت کا جاری کردہ نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیا جاتا ہے تو میں وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کے خلاف توہین عدالت کا نوٹس جاری کروں گا، چیف جسٹس قاسم خان نے پنجاب حکومت کا کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو مجسٹریٹ کے اختیارات دینے کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

پی ٹی آئی سوشل میڈیا ٹیم ہیڈ عمران غزالی وزارت اطلاعات کے ‘ڈیجیٹل میڈیا ونگ’ کے جنرل مینجر مقرر

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حکومت کے میرٹ پر تعیناتیوں کے دعوے اقربا پروری …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے