منگل , 13 اپریل 2021
ensdur

وفاقی وزیر اسد عمر کے بھائی محمد زبیر کے اہلخانہ کو ویکسین لگانے پر ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر کو عہدے سے ہٹا دیا گیا

وفاقی وزیر اسد عمر کے بھائی، مسلم لیگ نون کے مرکزی رہنما اور سابق گورنر سندھ  محمد زبیر کے اہل خانہ کو ویکسین لگانے پر ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر انیلہ قریشی کو عہدے سے ہٹا دیا گیا۔ سربراہ این سی او سی اسد عمر نے معاملے کا نوٹس لے لیا، سابق گورنر محمد زبیر نے معاملے سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا۔

کورونا ویکسین غیر متعلقہ افراد کو لگانے پر صوبائی وزیر صحت سندھ نے ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر انیلہ قریشی کو عہدے سے ہٹاتے ہوئے کوآرڈینیٹر ای او سی کو تحقیقات کا حکم دے دیا۔

معاملے پر وفاقی نمائندوں نے بھی تنقید کی، سربراہ این سی او سی اسد عمر نے معاملے کا نوٹس لیا ہے۔ شہباز گل نے واقعہ کو شرمناک قرار دیا اور وزیراعلیٰ سندھ سے سوال کیا کہ فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز سے پہلے کیا ویکسین سیاسی خاندانوں کو لگائی جا رہی ہے ؟ پھر مراد علی شاہ کہتے ہیں ہم کسی کو جواب دہ نہیں ہیں۔

مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما محمد زبیر نے ردعمل میں کہا ہے کہ بیٹی اور داماد کے ویکسینیٹ ہونے کاعلم نہیں تھا، سب اپنے فیصلوں میں آزاد ہوتے ہیں، میرا بیٹا اس میں شامل نہیں تھا، پانچ سال گورنر رہا، کوئی انگلی نہیں اٹھا سکتا، میری عمر ویکسی نیشن لگوانے کی ہے، اگر فیور لینا ہوتی تو اپنے لئے لیتا۔

دوسری جانب محکمہ صحت سندھ نے تین رکنی ویکسین آڈٹ کمیٹی قائم کر دی ہے۔ کمیٹی ارکان ہفتہ وار رپورٹ وزیر صحت سندھ کو پیش کریں گے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

پیپلزپارٹی نے پی ڈی ایم عہدوں سے استعفے مولانا فضل الرحمن کو بھجوا دیئے

پیپلز پارٹی نے اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم سے علیحدگی کے فیصلے پر مرحلہ وار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے