اتوار , 20 ستمبر 2020
ensdur

نیب آرڈیننس 1999 کے رولز ابھی تک نہیں بن سکے، سپریم کورٹ نے چیئرمین نیب کی تعیناتیوں کے اختیار کا ازخودنوٹس لے لیا

سپریم کورٹ نے چیئرمین نیب کی تعیناتیوں کے اختیار کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے اٹارنی جنرل کو معاونت کیلئے نوٹس جاری کر دیا۔

سپریم کورٹ نے جعلی نیب افسر ضمانت کیس کا تحریری حکمنامہ جاری کر دیا، حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ چیئرمین نیب تعیناتیوں کا اختیار رولز کے تحت ہی استعمال کر سکتے ہیں، نیب آرڈیننس کے تحت 1999 سے آج تک رولز نہیں بن سکے۔ حکمانے میں استفسار کیا گیا کہ کیا چیئرمین نیب آئین کے آرٹیکلز 240 اور 242 کو بالائے طاق رکھ سکتے ہیں۔ عدالت نے معاونت کیلئے اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کر دیا ہے۔

سماعت کے دوران خود کو ڈی جی نیب عرفان منگی ظاہر کرنے والے ملزم ندیم احمد کی ضمانت منظور کر لی گئی، عدالت نے رجسٹرار آفس کو ازخودنوٹس الگ سے سماعت کیلئے مقرر کرنے کی ہدایت کی ہے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

بلاول بھٹو زرداری کے بتائے گئے دھماکہ خیز اِنکشافات سچ ہیں یا جھوٹ؟

رپورٹ: امام بخش آپ بلاول بھٹو زرداری کو سخت ناپسند کرتے ہیں یا پھر دل …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے