پیر , 30 نومبر 2020
ensdur

مہنگائی کنٹرول نہ ہوسکی، ایک ماہ میں اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 12فیصد اضافہ

مہنگائی کنٹرول کرنے کے دعوے ہوا ہو گئے، ایک ماہ میں اشیائےخوردونوش کی قیمتوں میں12فیصد تک اضافہ ہوا، ضلعی افسران فیلڈ میں جانے کےبجائے سب اچھا کی رپورٹس دینے پر لگ گئے، قانون نافذ کرنے والے اداروں نے رپورٹس سے اعلیٰ حکام کو آگاہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق مہنگائی کنٹرول کرنے کا معاملے پر اجلاس ہوئے، رپورٹس بنیں لیکن عمل درآمد نہ ہو سکا۔ ایک ماہ میں اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں12فیصد تک اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔ قانون نافذ کرنیوالے اداروں نےمہنگائی سے متعلق رپورٹ اعلیٰ حکام کو پیش کر دی۔

ایک ماہ میں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے 8، چیف سیکرٹری کے21اجلاس ہوئے، وزراء اور سیکرٹریز کی ڈیوٹیاں لگیں، 22 وزراء اور24 سیکرٹریز نے وزٹ ہی نہ کئے۔

ذرائع کے مطابق پنجاب کے 17اضلاع میں مہنگائی پر قابو پانے کے لیے کچھ نہ کیا گیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب اور چیف سیکرٹری کو ڈپٹی کمشنرز اور دیگر افسران سب اچھا کی رپورٹس ہی دیتے رہے قانون نافذ کرنے والے اداروں نے رپورٹس سے اعلیٰ حکام کو آگاہ کردیا۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

سابق وزیراعظم میر ظفراللہ خان جمالی راولپنڈی میں انتقال کرگئے

سابق وزیراعظم پاکستان میر ظفراللہ خان جمالی انتقال کرگئے۔ میر ظفراللہ خان جمالی دل کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے