اتوار , 20 ستمبر 2020
ensdur

مہابارت اور سندھی راجا جئدرت | یوسف خشک

تحریر: یوسف خشک

مہابارت میں بہت ساری ایسے راجا تہے جو جو اس جنگ کے خلاف تھے جو نہیں چاہتے تہے کے یہ جنگ ہو ان میں سے پتا مہا بیشم دروڑ آچاریا کرن کرپا چاریا سندہودیش راجا جئیدرت سرفہرست ہیں ان کے ناچہاتے ہوئے بھی دریودن کی اہنکار کی وجہ سے ان کو لڑنا پڑا. جیسے بیشم اور دروڑ آچاریا اپنے وچن میں بندھے ہوئے تہے کرن اپنی دوستی کی وجہ سے اپنے بہایون کے خلاف لڑا اسی طرح سندہودیش کے راجا جئدرت بہی اپنی رشتیداری کی وجہ سے کورؤن کے سات جنگ میں کہڑا رہا جئدرت دریودن کی بہن دہشالا کا شوہر تہا. کورؤن کا داماد ہونے کی وجہ سے اس کو اس جنگ میں شامل ہونا پڑا.
مہابارت کتاب میں سندھ کو سندہودیش کہا گیا ہے اسی کتاب میں آتا ہے کہ سندہودیش کا اک راجا تہا ورد کشتر . اس کو بیٹا ہوا اس کا نام رکہا گیا جئدرت. اس وقت پنڈتوں نے بہشوانی کی کے یہ راج کمار بہت بہادر ہوگا اس کی موت جنگ کے میدان میں ہوگی اور اس کا سر وہ یودہا کاٹیگا جو سنسار کے یوداہون کے برابر ہوگا . یہ سن کر ورد کشتر نے بیٹے کے پریم میں یہ الفاظ نکالے کے جو بی میری بیٹے جئدرت کا سر زمین پر پہینکیگا اس کا سر بہی اسی ٹائیم زمین پر گر جائیگا. وقت گزرتا رہا جئدرت بی جوان ہو گیا تو ورد کشتر نے سندہودیش کی راج کدی پر جئدرت کو بٹہا کر سنیاس دارن کر لیا اور کروشیتر کے قریب جہنگل میں پوجاپاٹ کرنے میں مصروف ہوگیا جئدرت نے عقلمندی اور دانشمندی سے حکومت چلائی جئدرت آریاورت کی 17 پیڑہی میں سے تہا جئدرت کی دور میں سندہودیش موجودہ پورا سندھ بلوچستان کے علاقہ سبی قلات پر مشتمل تہا جب جئدرت دروپدی کو سندہودیش لیکر آیا تہا تب دروپدی نے جئدرت سے پوچہا کے کیا تم وہی اکیلے راجا ہو جس نے سندھو سیوی سویا حاصل کئے ہیں اور اس سکی اور طاقتور دیش پر راج کر رہے ہو۔
دادا گنگارام سمراٹ اپنے کتاب میں لکہتے ہیں کے دروپدی اور جئدرت اک دوسری سے پیار کرتے تہے یہ بات کتنی سچ ہے کچھ کہ نہیں سکتے.
جب کروشیتر میں مہابارت کی جنگ شروع ہوئی۔
تو اچاریا دروڑ نے چکرویو بنایا جس میں کوئی نہیں گس سکا تو مجبورن یڈیشٹر نے ابیمنیون کو چکرویو میں بہیجا اور بیم نکل سہدیو کے سات خد یڈیسٹر بہی ابیمنیون کے پیچہے جانے لگا جب ابیمنیون چکرویو ٹوڑ کر آگے نکلا اور کورون کی سینا کا ناش کرنے لگا تو جئدرت اپنے سینا کو بچانے کے لئے بجلی کی طرح پانڈوں پر ٹوٹ پڑا ابیمنیون آگے جا چکا تہا باقی پانڈو پیچہے رہ گئے تہے جئدرت نے ویو کو مکمل بند کر دیا اور یدیشٹر سے لڑنے لگا مگر یڈیشتر جئدرت کے آگے ٹک نہیں پایا سئو کورون کا ناش کرنے دینے والا بیم سین بہی جئدرت کے سامنی بی بس رہا جئدرت نے بیم کے رتھ کو ٹوڑ دالا بیم کو بہاگ کر ساتیکی کے رتھ پر چڑنا پڑا اور پانڈو اگے نہیں جا پائے اور ابیمنیون نے ویرگتی حاصل کرلی . جب ارجن کو پتا چلا کے ابیمنیون جئدرت کی وجھ سے مرا ہے تو ارجن نے پرتگیا کی کے کل سورج ڈھلنے سے پہلے جئدرت کو مارونگا نہیں تو خد کو مار دونگا.

جب ارجن کی پرتگیا کی خبر دریودن کو چلی تو وہ جئدرت کے پاس گیا کے تم سندھو دیش واپس چلے جاؤ جب تم یہاں نہیں ہوگے تو تم کو ارجن نہیں مار پائیگا تو میری بہن دہشالا کا پتی بہی سلامت رہیگا اور ارجن خد کو مار دیگا تو ہم یہ جنگ جیت جائینگے جئدرت نے کہا کے میں ارجن سے ڈر کر کائروں کی طرح نہیں بہاگون گا اگر ارجن سے لڑتے ہوی مجہے ویرگتی ملی تو وہ میری لئے گرو کی بات ہوگی.

جب جئدرت میدان جنگ چھوڑ کر جانے کو تیار نہیں ہوا تو جئدرت کو میدان جنگ کی پیچہی والی سائیڈ پر بارا میل کے مفاصلے پر کہڑا کیا گیا اور اس کی حفاظت کے لئے کرن اشوتہاما بورشلا شلیہ کرپاچاریا مقرر کئے گئے. کورؤں کے سینا کو شکٹ چکریو میں کہڑا کیا گیا اس کو مدد دینے کے لئے پدم ویو بنایا گیا پدم ویو سے مضبوط سوچی ویو بنایا گیا اور جئدرت کو وہاں کہڑا کیا گیا شکٹ ویو کے دروازی پر اچاریا دروڑ کہڑی تہے ارجن جنگ میں اگے چلتا رہا وہاں جا پہچا جہاں دروڑ کہڑی تہے ارجن نے آچاریا کو کہا گرو دیو میری راستے سے ہٹ جائو مجہے سندھو راج کے پاس پہچنا ہے دروڑ نے کہا سندھو راج کے پاس پہچنے سے پہلے تمہیں مجھ سے لڑنا ہوگا یہ لڑائی کافی وقت چلی تب کرشن نے ارجن سے کہا اگے چلو دروڑ سے نہیں لڑ پائیگے پہر ارجن جئدرت کے پاس جا پہچا جئدرت اور ارجن میں خون خوار جنگ ہونے لگی جئدرت ایسے لڑ رہا تہا کے ارجن کو اپنے پوری طاقت لگانی پڑ رہے تہی یدیشٹر بہی پریشانی میں تہا کے شاید ارجن جئدرت کے ہاتون مارا گیا ہے تو اس نے بیم کو خبر لانے کے وہاں بہجہا جہان جئدرت اور ارجن لڑ رہے تہے بیم کا وہان جاتے ہوی اس کا سامنا کرن سے ہوا اور وہ اپس میں لڑنے لگے پہلے بیم کرن پر بہاری رہا پہر کرن نے بیم کو اتنا تنگ کیا کے بیم مری ہوی ہاتھیوں کے پیچہے چپنے لگا لیکن کرن نے بیم کو مارا نہیں کیوں کے کرن نے اپنے مان کنتی کو وچن دی چکا تہا ارجن کے سوا کسی بہی بہائی کو نہیں مارونگا ادہر ارجن اور جئدرت خوب لڑ رہے تہے جب کرشن نے دیکہا کے ارجن جئدرت کو نہیں مار پا رہا ہے اور جئدرت ارجن پر بہاری پڑ رہا ہے تو اس نے اپنے شکتی سے اندہیرا کر دیا کورؤں نے سمجہا کے رات ہو گئی ہے جنگ کا ٹائیم ختم ہو گیا ہے کورؤ جشن منانے لگے کے ارجن جئدرت کو نہیں مار پایا ہے اور وہ اب خد کو ماریگا جئدرت بہی باہر آگیا تب اچانک سورج نکل آیا اور روشنی ہوگئی اور ارجن نے تیر چلایا تو جئدرت کا سر کاٹ دیا اور کرشن نے جئدرت کا سر اس کے پتا ورد کشتر کے گود میں رک دیا اس وقت ورکشتر کروشیتر کے پاس پوجا میں مصروف تہے جب اس نے جئدرت کا سر اپنے گود میں دیکہا تو ڈر سے اسے نے جئدرت کے سر کو نیچہے پینکا تو اس کا اپنا سر بہی کٹ کر نیچے گر گیا اس طرح ارجن اور کرشن کے دوکے اور فریب کی وجھ سے سندھو دیش کے دو راجا ورد کشتر اور جئدرت ماری گئی.
جئدرت کی مرتیو کے بعد سندہی فوج جوش سے لڑتے ہوی ختم ہو گئی.
مہابہارت جنگ کے بعد ارجن سندھو دیش پر حملا کرنے کے لئے آیا جب جئدرت کی بیوی دہشالا کو پتا چلا تو وہ اپنے چہوٹے بیٹے کو لیکر ارجن کے پاس گئی اور ارجن سے کہا اپنے بہانجے کو مار کر پہر اگے جا کر سندہویش پر حملا کرو ارجن نے اپنے کزن بہین کی یہ حالت دیکھ کر اس کے سر پر ھاتھ رک کر واپس ہستیناپور لوٹ گیا اس کے بعد کئین سالون تک رانی دہشالا نے سندہودیش پر حکومت کی.

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

عاصم باجوہ نے بلوچستان میں سازش کی، نواز شریف

پیپلز پارٹی کی میزبانی میں منعقد آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے