اتوار , 20 ستمبر 2020
ensdur

ملک کی نامور خواتین صحافیوں کے جانب سے پی ٹی آئی پر آن لائن ہراسانی کے الزامات

ملک کی نامور خواتین صحافیوں نے چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق بلاول بھٹو زرداری کو سوشل میڈیا پر ہونے والی ہراسانی کے معاملے سے آگاہ کیا۔ قائمہ کمیٹی کا اجلاس پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔

اس موقع پر عاصمہ شیرازی نے کہا کہ اختلاف رائے پر خواتین صحافیوں کو ہراساں کیا جارہا ہے، میرے گھر کے اندر دو بار لوگ گھسے تاکہ ہراساں کرسکیں، پاکستان کی خواتین صحافیوں کو سماجی طور پر تنہا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، بہت ساری خواتین صحافیوں نے سوشل میڈیا پر ہراسانی کے ڈر سے ٹویٹ تک کرنا چھوڑدئیے ہیں،

عاصمہ شیرازی نے مزید کہا کہ ہم اپنی بچیوں کو گالیوں کے ڈر سے گھر نہیں بیٹھنے دیں گے، خواتین صحافیوں کے پیچھے پی ٹی آئی کے پانچ میڈیا سیلز ہیں یا کوئی اور، یہ میرے علم میں نہیں، میں ہرگز یہ نہیں کہوں گی کہ کوئی ایک سیاسی جماعت خواتین صحافیوں کی ہراسانی کے پیچھے ہے۔

عاصمہ شیرازی نے کہا کہ اب تو اتنی گالیاں پڑتی ہیں کہ ان کا ڈر بھی ختم ہو گیا ہے۔’ انھوں نے کہا کہ ‘سوشل میڈیا پر میرے خلاف اتنی مہم چلائی گئی کہ میرے بیٹے کو سکول میں اس کے کلاس فیلو نے کہا کہ تمہاری ماں نواز شریف سے رشوت لیتی ہے۔

بے نظیر شاہ نے اظہر مشوانی پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت سے تعلق رکھنے والے اظہر مشوانی مجھے مسلسل آن لائن ہراساں کررہے ہیں، وزیراعظم کے فوکل پرسن ڈاکٹرارسلان خالد بھی مجھے آن لائن ہراساں کرتے ہیں۔

غریدہ فاروقی نے تحریک انصاف پر الزام لگایا کہ مسلم لیگ نون کی خواتین سیاست دانوں کے خلاف گھٹیا زبان استعمال کی گئی، میں نے صدر عارف علوی کا انٹرویو کیا، ان سے میرا جھوٹا افیئر بنادیا گیا، مجھے آن لائن الزامات کی وجہ سے چار بار نوکری گنوانا پڑی ہے، پی ٹی آئی سمیت اکثر گروہوں نے ان آفیشل اکاؤنٹس رکھے ہوئے ہیں تاکہ ہراسانی کرسکیں۔

غریدہ فاروقی نے مزید کہ امیرے خلاف ایسی کمپئن چلائی کہ میرا گھر سے باہر نکلنا مشکل ہوگیا، ہم کسی کا انٹرویو یا خبر لینے کے لئے کسی سے ملاقات نہیں کرسکتے،میرا تعلق مسلم لیگ نون سے جوڑا گیا، شہباز شریف سے شادی کا جھوٹ بولا گیا، زرتاج گل کے خلاف میں نے کیس کیا، اس کیس پر وہ ضمانت لیتی رہیں، عثمان ڈار اور فواد چوہدری کے ذریعے زرتاج گل نے مجھ سے معافی مانگنے کی کوشش کی۔

غریدہ فاروقی نے دعویٰ کیا کہ زرتاج گل نے ایف آئی اے پر دباؤ ڈال کر میرا ہراسانی کے خلاف ختم کروادیا، جس پر بلاول نے کہا کہ غریدہ فاروقی کے خلاف ہراسانی کے کیس کو کمیٹی دوبارہ ایف آئی اے بھجوائے گی۔

امبر شمسی نے کہا کہ پاکستان کی خواتین صحافی سوشل میڈیا پر ہراسانی کے خلاف اس لئے آواز اٹھارہی ہیں تاکہ آئندہ نسلیں اس سے محفوظ رہیں، میں اپنی بچی ساتھ لائی ہوں تاکہ اس میں ہراسانی کے خلاف لڑنے کی ہمت پیدا ہو، ہمارے خاندان سوشل میڈیا پر ہمارے خلاف ہراسانی کی وجہ سے اذیتوں سے دوچار ہیں، ایک ٹویٹ کرنے کے بعد مغلظات کا طوفان شروع ہوجاتا ہے،

ریما عمر کا کہنا تھا کہ خواتین کی آن لائن ہراسانی ایک ناقابل تردید حساس حقیقت ہے، کسی خاتون کی ترقی کی وجہ اہلیت کے بجائے ان کی جنسی خصوصیت کو قرار دیا جاتا ہے، میرے شوہر کے ساتھ تصاویر کی جگہ کلبھوشن یادو کی تصاویر استعمال کی گئیں، اگر کسی کو لگتا ہے کہ خواتین صحافیوں نے کوئی غلط خبر دی تو یہ ان کی ہراسانی کا جواز نہیں ہوسکتا۔

تنزیلہ مظہر نے کہا کہ مرد صحافیوں سے اختلاف ہو تو انہیں لفافہ جبکہ خواتین صحافیوں سے اختلاف پر انہیں بدکردار کہا جاتا ہے، شادی کی تقریب میں میرے رقص کو غلط انداز میں پیش کیا گیا، میں نے ایف آئی اے میں شکایت کی تو کوئی سنوائی نہیں ہوئی، میں نے ہراسانی کے خلاف جدوجہد کی تو مجھ پر توہین مذہب کا الزام لگانے کی کوشش ہوئی÷

تنزیلہ مظہر نے مزید کہا کہ آپ یہ مت دیکھیں کہ ہراسانی کون کررہا ہے، یہ دیکھیں کہ ہراسانی ہورہی ہے، ہراسانی کے خلاف اپنی جدوجہد کے تین سال بعد تک مجھے کسی نے نوکری نہیں دی۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

عاصم باجوہ نے بلوچستان میں سازش کی، نواز شریف

پیپلز پارٹی کی میزبانی میں منعقد آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے