منگل , 22 ستمبر 2020
ensdur

مبشر لقمان اور ارشاد بھٹی نے آفریقہ کو تھرپارکر بنادیا

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر صحافی مبشر لقمان اور ارشاد بھٹی نے ایک پروپیگنڈہ تصویر شیئر کی، کہ جس میں ایک لڑکا جوہڑ کا آلودہ پانی پیتے ہوئے دکھایا گیا ہے، اور دعویٰ کیا ہے کہ یہ سندھ کے ریگستانی علاقے تھرپارکر سے ہے۔ اس تصویر کو پہلے بھارتی میڈیا پر استعمال کیا گیا تھا، جبکہ کچھ کا دعوی ہے کہ یہ افریقہ سے ہے۔

دونوں صحافی حضرات نے تھرپارکر کے علاقے کی خراب حالت پر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کی حکومت پر تنقید کرنے کے لئے یہ تصویر شیئر کی ہے۔

پیر کے روز ، مبشر لقمان نے ٹویٹر پر اس تصویر کو شیئر کیا ، جس میں انہوں نے دعویٰ کیا گیا ہے کہ  ’21 ویں صدی‘ میں اس علاقے کو تھرپارکر سندھ کہا جاتا ہے۔ تاہم ، اصل میں یہ تصویر یا تو ہندوستان یا افریقہ میں لی گئی تھی۔ تاہم یہ واضح یے کہ یہ تھرپارکر کی نہیں ہے جیسا کہ سینئر صحافیوں نے دعویٰ کیا ہے۔

سوشل میڈیا پر تنقید کے بعد ارشاد بھٹی نے تصویر ڈلیٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ‘ جی بلکل یہ تصویق کرلی، یہ واقعی تھرپاکر کی نہیں ہے، معذرت نشاندہی کا شکریہ’۔

یاد رہے یہی تصویر پاکستان تحریک انصاف کے آفیشل پیج پر بھی شائع کی جاچکی ہے، جسے بعد ازاں ڈلیٹ کردیا گیا تھا۔

واضح رہے صحافی مبشر لقمان نے مبینہ شئر کردہ تصویر کو ڈلیٹ نہیں کیا بلکہ اپنے ہی ٹویٹ کو دوبارہ ریٹویٹ کیا ہے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

نواز شریف اتنے بھی “بھولے” نہیں | نصرت جاوید

بسااوقات واقعتا گھبرا جاتا ہوں۔ چند مہربان پڑھنے والے بہت اشتیاق سے اہم ترین سیاسی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے