منگل , 13 اپریل 2021
ensdur

قبروں کی کمائی کابھی احتساب ہونا چاہیے، خواجہ آصف کی شاہ محمودقریشی کا نام لیئے بغیر تنقید

قبروں کی کمائی کا بھی احتساب ہونا چاہیے،یہ غوث اعظم کے نعرے لگاکر اپنے مریدوں کی بالیاں اتار کر جیب میں ڈال لیتے ہیں، ان سے پانچ پانچ ہزار کی گڈیاں لیتے ہیں، ان پر قبروں کا ریفرنس بنائیں۔ خواجہ آصف کی قومی اسمبلی میں شاہ محمود قریشی کا نام لیئے بغیر ان پر سخت تنقید۔

قومی اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے خواجہ آصف نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ نيب کو ايک ريفرنس قبروں کی کمائی کھانے والوں پر بھی بنانا چاہيے۔قبروں کی کمائی بھی اثاثے ميں شامل ہونی چاہيے۔ اگر ميرے آمدن سے زائد اثاثے ہيں تو ان کے بھی قبروں کے اثاثے ہيں اس لئے ان پر قبروں کا ريفرنس بنائيں۔

خواجہ آصف نے مزید کہا کہا کہ جس قسم کی کمائی ہو وہ کمائی بولتی ہے۔ يیہ غوث اعظم کے نعرے لگاکر اپنے مریدوں کی بالیاں اتار کر جیب میں ڈال لیتے ہیں۔ لوگوں سے 5،5 ہزار کی گڈیاں وصول کرتے ہيں۔

خواجہ آصف نے نیب سے مطالبہ کیا کہ نيب اس پر بھی ايکشن لے، احتساب کيوں نہيں ہوتا؟ کيوں نہيں ريفرنس بنتا؟ شاہد خاقان، شہباز شریف، سلیمان شہباز اور حمزہ شہباز پر ايک دن ميں ريفرنس بن گيا۔

خواجہ آصف نے کہا کہ حکومت کا زوال ہونے والا ہے، يہ قانون خود ان پر آئے گا، استثنیٰ نہيں ملے گا۔ ہمیں کوئی نرمی نہیں چاہیے، اللہ ان کا بھی حامی و ناصر ہو۔مذاکرات کی پردہ داری تھی لیکن اسے انہوں نے موضوع بنايا۔ آئندہ حکومت سے کوئی رابطہ نہیں کریں گے۔

خواجہ آصف نے کہا کہ 2013 میں شاہ محمود قریشی نے مجھ سے ملاقات کی، پھر نواز شریف سے ملاقات کی، اس کے بعد انہوں نے جنرل شجاء پاشا سے ملاقات کی، آگے کی کہانی سب کو معلوم ہے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

پیپلزپارٹی نے پی ڈی ایم عہدوں سے استعفے مولانا فضل الرحمن کو بھجوا دیئے

پیپلز پارٹی نے اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم سے علیحدگی کے فیصلے پر مرحلہ وار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے