منگل , 22 ستمبر 2020
ensdur

فردوس عاشق اعوان نے کرونا کی مریضہ ہونے کے باوجود شناخت چھپانے کا اعتراف کرلیا

وزیر اعظم کی سابق معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے  دھماکا خیز انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے کورونا کی مریضہ ہوتے ہوئے یہ بات چھپائی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ انہیں بھی کورونا نے اپنی لپیٹ میں لے لیا تھا لیکن انہوں نے بطور پازیٹو مریض اپنی شناخت چھپائی۔ شناخت چھپانے کا مقصد میڈیا کو بے خبر رکھنا تھا، ان کے مریض ہونے کے حوالے سے انہیں اور لیبارٹری کو ہی پتا تھا۔

ڈاکٹر فردوس کا کہنا تھا کہ انٹرنیٹ پر وائرل ہوا تھا کہ ثناء مکی کے قہوے سے کرونا کا مریض صحتیاب ہوجاتا ہے، میں ڈاکٹر تھی لیکن مجھے میری فیملی نے زبردستی قہوہ پلایا دیا ، یہ سب گھٹیا اور فضول باتیں ہیں، اس قہوے نے مجھے جتنا نقصان پہنچایا، شاید کرونا نے اتنا نقصان نہیں پہنچایا۔میرا امیونٹی سسٹم اس قہوے سے بہت متاثر ہوا۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ان کے کورونا کی مریضہ ہوتے ہوئے اپنی شناخت کامیابی کے ساتھ چھپالینے سے ظاہر ہوتا ہے کہ سسٹم میں خلا موجود ہے اسی لیے وہ اپنے پازیٹو ہونے کی خبر باآسانی چھپانے میں کامیاب ہوئیں۔ سابق معاون خصوصی اطلاعات نے تصدیق کی کہ انہیں کورونا ہوا تھا لیکن اب وہ صحتیاب ہوچکی ہیں۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

نواز شریف اتنے بھی “بھولے” نہیں | نصرت جاوید

بسااوقات واقعتا گھبرا جاتا ہوں۔ چند مہربان پڑھنے والے بہت اشتیاق سے اہم ترین سیاسی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے