منگل , 13 اپریل 2021
ensdur

صوبائی دارالحکومت لاہور ایک بار پھر کچرے کا ڈھیر بن گیا

پنجاب کا صوبائی دارالحکومت لاہور ایک بار پھر کچرے کا ڈھیر بن گیا، لاہور ویسٹ مینجمنٹ نئی صفائی کمپنی کے ساتھ معاہدہ نہ کرسکی، معاہدہ نہ ہونے کے باعث شہر تیزی سے کچرا کنڈی میں تبدیل ہونے لگا۔

لاہور میں صفائی کی صورتحال ابتر ہوگئی ہے، گلیوں اور سڑکوں پر کوڑا ہی کوڑا نظر آرہا، جس کی وجہ سے تعفن اور بدبو کے باعث شہریوں کا گزرنا محال ہوگیا۔

کچرے کے ڈھیر کے باعث کاروبار مندی کا شکار ہوگیا اور شہری بھی بلبلا اٹھے ہیں، کئی کئی دنوں تک گلیوں، محلوں سے کچرا نہیں اٹھایا جا رہا، گرمی آنے سے مچھروں کی افزائش بھی شروع ہوگئی۔

لاہور ویسٹ مینجمنٹ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ شہر میں روزانہ 5 ہزارٹن کچرا جمع ہوتا ہے، گزشتہ روز 3 ہزار ٹن کچرا اٹھایا گیا تھا، آج شہر کا ٹوٹل کچرا 7 ہزار ٹن ہو گیا، نئی صفائی کمپنی سے معاہدے کی بات چیت جاری ہے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

پیپلزپارٹی نے پی ڈی ایم عہدوں سے استعفے مولانا فضل الرحمن کو بھجوا دیئے

پیپلز پارٹی نے اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم سے علیحدگی کے فیصلے پر مرحلہ وار …

ایک تبصرہ

  1. UNLESS WE LEARN TO MANAGE THE WASTE AND EARN BILLIONS PER CITY WE CAN NOT MANAGE IT AND IT IS ALONG TIMES RISK NOT ALONE FOR THE ENVIRONMENT BUT FOR THE WHOLE LIFE SYSTEM AND INCREASED BURDEN ON HEALTH CARE WORTH BILLIONS PER CITY PER MONTH.
    BUT THE MOST IDIOT BUT EVEN INTERESTING THING IS WE NEVER CARE FOR ITS MANAGEMENT AND EARNING BILLIONS BUT EVER ACTIVE FOR CARRYING ,SPREADING AND DUMPING THE WASTE AND CONTAMINATING OUR SOILS FOR EVER.SO IT NEEDS TO EDUCATE THE BABU THERE IN THE GOVERNMENT WHO IS THERE FOR JUST MINTING.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے