منگل , 22 ستمبر 2020
ensdur

صحافی کے قتل پر سیاست۔۔۔!

 

تحریر: نذیر ڈھوکی

ایک روز قبل سندھ کے شہر محراب پور سے تعلق رکھنے والے صحافی عزیز میمن کی لاش پرسرار طور پر ملی جس کے گلے سے کیبل تار لپٹی  ہوئی تھی، ابھی نہ پوسٹ مارٹم کی رپورٹ منظر عام پر آئی اور نہ تحقیقات کے لیٸے کوئی کمیٹی تشکیل دی گٸی مگر فوری طور صحافی کے قتل کے تانے بانے چیٸرمین پیپلز پارٹی کے گذشتہ سال کی کیٸے ہوئے ٹرین مارچ سے جوڑنے کے جتن شروع ہوگٸے.
یہ جتن ایسے سرکردہ قلم کاروں کی طرف سے شروع ہوئے جو رائے عامہ تیار کرنے کا ہنر رکھتے ہیں.
خیالی کہانی گھڑنے والوں کے پاس کہانی گھڑنے کیلئے بہانا یہ تھا کہ عزیز میمن نے گزشتہ سال مارچ میں چیٸرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کے ٹرین مارچ کی رپورٹنگ کی تھی جس پر جیالے ناراض تھے اور پولیس انہیں دھمکیاں دے رہی ہے، اس کے بعد صحافی عزیز میمن واپس اپنے شہر چلے گٸے اور صحافتی فرائض بغیر کسی رکاوٹ کے سر انجام دیتے رہے اس دوران انہوں نے کبھی شکایت نہیں کی کہ ان کی جان کو خطرہ ہے .

تقریباً ایک سال بعد عزیز میمن کا پرسرار انداز میں قتل ہوتا ہے تو ایک دم صحافی کے قتل کو چیٸرمین پیپلز پارٹی کے ٹرین مارچ کی رپورٹنگ سے جوڑا جاتا ہے، یہ تانے بانے جوڑنے والوں کی اپنی داستانیں خود سوالیہ نشان چھوڑتی ہیں .
میری اپنی پی ایف یو جے اور صحافتی تنظیموں کے عہدیداروں
سے اس حوالے سے بات ہوئی جو خود اس بات پر حیران تھے کہ ایک صحافی کے قتل کو ایک سال پرانی خبر سے جوڑنا کہاں کا انصاف ہے؟

جس پُھڑتی کے ساتھ ایک صحافی کے قتل کی تحقیقات کا رخ موڑنے کی مشقت کی گٸی ہے یہ اصل قاتلوں کو کو بچانے کی کوشش نہیں تو اور کیا ہے ؟

جہان تک صحافی عزیز میمن کے قتل کی بات کا تعلق ہے تو ان کے خاندان کا یہ حق ہے اسے انصاف ملے اور قاتلوں کو سزا ملے جس کیلٸے ضروری ہے صحافی کے قتل کی شفاف تحقیقات ہو اس حوالے وزیر اعلیٰ سندھ حکم دے چکے ہیں. اتوار کے دن صوباٸی وزیر سعید غنی نے غمزدہ خاندان کے پاس پہنچ کر ان سے تعزیت کی ٹی وی فوٹیج سے ہی معلوم ہوتا ہے کہ مقتول صحافی کے ورثا حکومت سندھ سے انصاف کی امید رکھتے ہیں، صحافی عزیز میمن کیوں قتل ہوئے؟

قاتل کون ہیں؟

اور قتل کے اسباب کیا ہیں؟

آزادی صحافت کے علمبردار بھی تحقیقات کرنے میں مصروف ہیں۔

مقتول صحافی کے جنازے میں پی پی رہنماوں نے شرکت اور قتل کی عدالتی تحقیقات کرانے کا اعلان بھی کیا مقتول صحافی کے وارث تو حکومت سندھ کے اعلان پر اعتماد کر رہے ہیں مگر صحافی کے قتل پر سیاست کرنے والوں کے مقاصد کچھ
اور ہیں۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

نواز شریف اتنے بھی “بھولے” نہیں | نصرت جاوید

بسااوقات واقعتا گھبرا جاتا ہوں۔ چند مہربان پڑھنے والے بہت اشتیاق سے اہم ترین سیاسی …

ایک تبصرہ

  1. My family all the tіme say that I am wasting my time here аt
    net, however I know I am getting familiaritү aⅼl the
    time by reading such good aгtiсⅼеs or reviews.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے