ہفتہ , 8 اگست 2020
ensdur
اہم خبریں

جاگ سندھی جاگ | سفرندیم زہری (کوئٹہ)

تحریر: سفرندیم زہری (کوئٹہ)

مجھے پتہ نہیں کہ اس عالمگیر خان کو سندھی ٹوپی اجرک پہنانے والا کون ہے مگر اس شخص کو پتہ ہونا چاہیئے کہ جس سندھ ٹوپی اجرک کی پہچان شہید ذوالفقار علی بھٹو نے اپنی طلسماتی شخصیت سے عالم دنیا میں پہچان کرائی اسی شہید ذوالفقار علی بھٹو کا قصور بھی یہی تھا کہ وھ ایک سندھی تھے مگر نمائندگی پاکستان کے تمام اقوام کی کیا کرتے تھے۔ اور انہیں ضیاء دور میں پھانسی دی گئی ان کا قصور یہی تھا کہ وھ سندھی تھے آج ایک سمگلر مہاجر رکن اسمبلی جنکی لاکھوں مہاجرین پاکستان کی ٹکڑوں پر پل رہے ہیں اسکی کیا حیثیت ہے کہ وھ شہید ذوالفقار علی بھٹو کی تصویر کی بےحرمتی کرے اور حیف ہے اس شخص پر جو اس تزلیل کردھ حرکت کے باوجود اس بےضمیر کو آجرک ٹوپی پہنانے سے پہلے جی ایم سید کی نظریاتی فکر کو مدنظر رکھتے ہوئے اسکی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر اس کو سندھ کا غیرت سمجھکر معافی کا مطالبہ کردیا ہوتا۔

سندھو دیش کی محکوم اقوام اور سندھی تہذیب وتمدن کو اور سندھ کے عظیم ترین شخصیت شہید ذوالفقار علی بھٹو کی تصویر کی بےحرمتی صرف شہید ذوالفقار علی بھٹو اور اسکے چاہنے والوں کی نہیں ہوئی بلکہ ہر باغیرت باضمیر سندھی کی غیرت کو للکار کر کیا گیا عالمگیر خان اسکے حواریوں نے یہ باور نہیں کرایا کہ ان کی سرزمین پر کرائیے دئیے بغیر کرایہ دار مہاجرین کا جس طرح سندھ عوام کی تہزیب تمدن رسم رواج ثقافت کے بعد اب شخصیات کی توہین کرنے میں کامیاب ہورہے ہیں مگر اس موصوف سندھی بھائی جیسے جعفر صادق ان کے ہمنوا ہم پیالہ ہوتے رہے تو سندھیوں کی کلچر ننگ ناموس کو ڈسنے کےلیے پرائے آستین سانپ پالنے تلاشی لینے کی ضرورت نہیں اگر کسی سندھی بھائی کو پیپلز پارٹی سے ہزار اختلاف ہوں مگر بحیثیت ایک( ۔براہوئی یعنی بروھی ) ہونے کے ناطے یہ ضرور باور کرانا چاہوں گا آپ سندھ کے سندھی بھائی مرہون منت پیپلز پارٹی شہید ذوالفقار علی بھٹو شہید بےنظیر بھٹو آصف علی زرداری کے تشکر ادا کریں کہ ان جیسے قدآور شخصیت سیاستدان انہیں ملتے آرہے ہیں ورنہ آج انکی حالت زندگی بلوچستان کے عوام سے زیادھ زبوں حالی سے کم نہیں ہوتا۔

سندھ تو صوفیاء کرام کی دھرتی ہے اولیاء کرام سے محبت رکھنے والے باشعور پر امن قوم سے تعلق رکھتے ہیں جہاں نفرت کی کوئی گنجائش نہیں رہتی مگر عالمگیر خان کی اس تزلیل حرکت سے ہی سندھ کے نوجوانوں کو پیپلز پارٹی اور عمران نیازی کی سیاسی تربیت میں فرق رکھنا چاہئیے کہ اخلاقیات کی سیاسی تربیتی نشست میں پیپلز پارٹی کے جیالے اس طرح کی حرکتیں نہیں کرتے فاشلسٹ سیاست کی عکس بندی عالمگیر خان اسکے ٹولے نے ثابت کردیا کہ انکی ضد پیپلز پارٹی شہید بھٹو سے ہے ۔مگر سندھ کے عوام پر بھی کبھی کبھار تعجب سا رہتا ہے دل دکھتا ہے کہ وھ غیر اخلاقی لیڈر غیر جمہوری پارٹی نیازی پارٹی میں بحیثیت سندھی کیسے شامل ہوگئے کہ ان کو تھوڑا سا ضمیر جگانا چاہیے تھا جس نیازی کی کمر بندی کرچکے ہوئے یہ وھ بدبخت سندھی تعصب بغض کا شکار ہے کہ شہید بےنظیر بھٹو کی شہادت پر ماسوائے مشرف عمران نیازی کے تمام اقوام نے آنسو بہائے سب نے ان کی شہادت پر اظہار افسوس تعزیت کرتے رہے چاہے وھ بےنظیر بھٹو شہید کے حامی تھے یا مخالف سب نے اپنی تہزیب رسم رواج چاہے وھ قومی یا سیاسی سب نے عکاسی کرتاہے مگر جنرغ فرعون وقت مشرف اور عمران نیازی نے فاتحہ خوانی تک کے لیے تکلیف نہیں کیے ۔۔کیا یہ سندھی قوم سے سندھی شخصیات سے نفرت بغض کی انتہا نہیں ۔سندھ کے عوام یہ کیوں بھول جاتے ہیں شہید ذوالفقار علی بھٹو کی پنجاب میں قتل شہید بےنظیر بھٹو کی پنجاب میں قتل سندھیوں کو سبق دینے کے لیے نہیں ہے کہ اپنی سندھی شخصیات کو سندھ تک محدود رکھا جائے ورنہ تخت پنجاب سے ہر ایک سندھی شخصیات کی لاشیں آتے رہینگے اور سندھی اٹھاتے رہیںنگے ۔عمران نیازی کے ڈکن چور عالمگیر خان کو سندھی ٹوپی اجرک پہنانے سے پہلے اس موصوف نام نہاد سندھی کو شہید ذوالفقار علی بھٹو کی تصویر کی بےحرمتی کرنے پر دو ٹوک موقف اپنانا چاہیے تھا نہ کہ مقدس اجرک پہنانا تھا ویسے جن کو کراچی کے عوام نے مسائل حل کرنے کےلیے ووٹ تک نہیں دیا وھی راتوں رات جیت کر ایک کھلی سازش کے انہیں پیپلزپارٹی کا راستہ روکنے اور پیپلز پارٹی کی کراچی میں عوام مضبوط رسی کو توڑنے کےلیے لایا گیا مگر کوئی تاریخی اوراق پڑھے تو پتہ چلتا ہے کہ پیپلز پارٹی کو توڑنے کمزور کرنے کےلیے MQM جیسے دہشتگرد جماعت کی بنیاد رکھی گئی جو پیپلز پارٹی توڑنے کے لیے اسوقت کے آمروں نے بنوایا مگر بدقسمتی سے وھ بغض بھٹو ناکام ہوا وھ MQM ہمارے ملک عزیز پاکستان کے خلاف ہمارے ملکی دشمن بھارت کےلیے بطور ایجنٹ کام کرتے رہے۔

آج بھی پیپلز پارٹی کی قیادت پیپلز پارٹی کے جیالے پاکستان میں جمہوریت کی بحالی کے لیے نئی نوجوان نسل کو عالمگیر خان والی سیاست نہیں بلکہ تمام اقوام تمام صوبوں تمام برادریوں تمام طبقات کو شہید ذوالفقار علی بھٹو والی سیاست اور شہید بےنظیر بھٹو والی کردار کی میثاق جمہوریت کی سیاست پر گامزن کرنے کےلیے جدوجہد جاری ہے۔

تمام سندھی بھائیوں کو میری طرف سے ۔دلی عید الاضحی مبارک ہو ۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ٹوئیٹر پر تین لاکھ سے زائد آوازیں #SindhIsNotColonyIK

کراچی ( اسٹاف رپورٹر) سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ٹوئیٹر پر تین لاکھ سے زائد …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے