منگل , 22 ستمبر 2020
ensdur

تاریخ کا کٹہڑا | نذیر ڈھوکی

تحریر | نذیر ڈھوکی

تاریخ کا یہی تو کمال ہے وہ اپنے مجرموں سے سچ اگلوانے کی قدرت رکھتی ہے اس کے مجرم آخر اپنے جرم کا اقرار کر ہی لیتے ہیں ، سابق بیوروکریٹ صدر غلام اسحاق خان نے ایک انٹرویو میں کہا ” اگر صادق آباد جو سندھ اور پنجاب کی سرحد ہے وہاں بیریٸر لگاکر پیپلز پارٹی کا راستہ نہ روکا جاٸے تو پیپلز پارٹی سندھ کے بعد پنجاب کو فتح کرتے ہوٸے صوبہ سرحد کو بھی فتح کر سکتی ہے ، ملک کے تین معتبر مانے والے صحافی جن کا نام نہیں لکھتا نے اقرار کیا کہ انہوں نے ایجنسیوں کے کہنے پر آصف علی زرداری کے خلاف کرپشن کی کہانیاں گھڑی تھیں ، سابق وزیر آعظم نواز شریف نے جنگ کے سہیل ویڑاٸچ کو انٹرویو دیتے ہوٸے تسلیم کیا کہ انہیں محترمہ بینظیر بھٹو اور آصف علی زرداری کے خلاف فوج اور آٸی ایس آٸی نے اکسایہ تھا، اس طرح جماعت اسلامی کے مرحوم امیر قاضی حسین احمد نے روزنامہ جنگ سہیل ویڑاٸچ کے سامنے تسلیم کیا کہ جنرل ضیاع کے موت کے بعد ہر طرف چیخ و پکار تھی فوج اور آٸی ایس آٸی والے کہہ رہے تھے کہ آٸی جی آٸی میں شامل ہو جاٶ کیونکہ جنرل ضیاع غروب اور بینظیر بھٹو طلوع ہو رہی ہیں۔

یہ راز بھی فاش ہو چکا ہے کہ 1988 کے انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی کی 44 جیتی ہوٸی قومی اسمبلی کی نشستیں چوری کی گٸیں تھیں ،سابق آرمی چیف جنرل اسلم بیگ اور اس وقت کے نگران وزیر آعظم غلام مصطفی جتوٸی 1990 کے انتخاباب میں داندھلی کا اعتراف کر چکے ہیں ، 1997 کے انتخابات کے حوالے سے اس وقت کے جنرل جعلی مینڈیٹ کا اقرار کر چکے ہیں . اور تو اور سپریم کورٹ کے سابق چیف جسٹس نسیم حسن شاہ نے جیو نیوز چینل پر اقرار کیا کہ جناب ذوالفقار علی بھٹو کو پھانسی کی سزا غلط تھی بھٹو صاحب بے گناہ اور محصوم تھے۔

نسیم حسن شاہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ اگر عدلیہ بھٹو صاحب کو پھانسی نہ دیتی تو جنرل ضیاع عدلیہ کو ہی ختم کردیتے .
اس طرح کے اعترافات اس دلیل کو مضبوط کرتے ہیں کہ ریاست نے جتنی طاقت پیپلز پارٹی کی قیادت کو ختم کرنے اور پیپلز پارٹی کو کچلنے کیلٸے استعمال کی ہے اگر یہی طاقت اور سرمایہ مقبوضہ کشمیر کی آزادی پر خرچ کیا جاتا تو سرینگر پر آج پاکستان کا سبز ہلالی پرچم لہرا رہا ہوتا .

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

سرگودھا، 9 سالہ بھتیجے نے غیرت کے نام پر پھوپھو کو قتل کردیا

پنجاب کے ضلع سرگودھا میں 9 سال کے بھتیجے نجم الحسن نے غیرت کے نام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے