جمعرات , 28 جنوری 2021
ensdur

اینٹی انکروچمنٹ میں تعینات خاتون اہلکار کا مرد اہلکاروں پر ہراسانی کا الزام

کراچی میں محکمہ اینٹی انکروچمنٹ میں تعینات خاتون اہلکار نے ادارے کے اکاؤنٹینٹ اور دیگر افراد کے خلاف ہراسانی کا الزام عائد کیا ہے۔

لیڈی پولیس کانسٹیبل افشاں کا کہنا ہے کہ مجھے ڈیڑھ سال سے تنخواہ ادا نہیں کی جارہی، تنخواہ مانگتی ہوں تو غیر اخلاقی، غیر قانونی مطالبات کیے جاتےہیں۔ اکاؤنٹنٹ اور دیگر لوگ ہراساں کرتے ہیں۔ مجھے گھر چلانے کے لیے تنخواہ کی ضرورت ہے، مجھے میرا قانونی حق ادا کیا جائے۔

خاتون اہلکار نے بلاول بھٹو زرداری، وزیر اعلیٰ اور دیگر سے مدد کی اپیل کی ہے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

جنسی ہراسگی۔۔۔! | سعدیہ معظم

تحریر: سعدیہ معظم میں کوئٹہ شہر کے ایک متوسط گھرانے میں پیدا ہوئی ۔ابو بینک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے