جمعرات , 28 جنوری 2021
ensdur

الیکشن میں مبینہ دھاندلی، گلگت بلتستان میں حالات کشیدہ ، کرفیو کا امکان

گلگت بلتستان میں احتجاج اور حالات کشیدہ ہونے کے باعث کرفیو لگانے کا امکان ہے۔

ڈی آئی جی گلگت ریجن وقاص احمد کا کہنا ہے کہ مشتعل افراد نے چار گاڑیوں اور ایک سرکاری دفتر کو آگ لگائی ہے، وقاص احمد نے کہا کہ سی سی ٹی وی ویڈیو کی مدد سے کچھ لوگوں کو شناخت کرلیا گیا ہے۔ حالات ابھی کنٹرول میں ہیں، اگر حالات دوبارہ بگڑے تو کرفیو بھی لگایا جاسکتا ہے۔

گلگت بلتستان اے 2 گلگت 2 کے غیر سرکاری و غیر حتمی نتائج پر پیپلز پارٹی کے کارکنوں کی جانب سے احتجاج کیا گیا ہے۔

ڈی آئی جی وقاص احمد کے مطابق مظاہرین نے گلگت بلتستان اے 2 گلگت 2 کے غیر سرکاری غیر حتمی نتائج کو دھاندلی زدہ قرار دیتے ہوئے احتجاج کیا ہے، احتجاج کے دوران مظاہرین نے ایک سرکاری دفتر اور 4 سرکاری گاڑیوں کو آگ لگادی ہے۔

دوسری طرف پیپلزپارٹی نے گلگت میں کشیدگی کی ذمہ داری وفاقی حکومت پر عائد کرتے ہوئے پارٹی کی سینئر رہنما شیری رحمان نے کہا کہ تحریک انصاف طاقت کی لالچ میں اندھی ہو چکی ہے۔ 126 دن ملک کو یرغمال کرنے والے پیپلز پارٹی کا پرامن احتجاج برداشت نہیں کرتے۔

انہوں نے الزام عائد کیا کہ تحریک انصاف کے کارکنوں نے گاڑیاں جلا کر افراتفری پیدا کرنے کی سازش کی۔ چیف الیکشن کمشنر بھی پی ٹی آئی کے ساتھ ملے ہوئے ہیں، وہ معاہدے مطابق ووٹوں کا فرانزک آڈٹ نہیں کروا رہے۔

ان کا کہنا تھا کہ چار حلقوں کی بنیاد پر ملک کو بند کرنے والے ہمارے مطالبے پر ایک حلقے کا فارنزک آڈٹ نہیں کروا رہے۔ ہم اب 2018ء کا دھاندلی ماڈل گلگت بلتستان میں نہیں چلنے دینگے۔ دھاندلی سرکار اب بےنقاب ہو چکی ہے۔ گلگت بلتستان کا امن خراب ہوا تو ذمہ دار وزیراعظم ہونگے۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

جنسی ہراسگی۔۔۔! | سعدیہ معظم

تحریر: سعدیہ معظم میں کوئٹہ شہر کے ایک متوسط گھرانے میں پیدا ہوئی ۔ابو بینک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے