منگل , 13 اپریل 2021
ensdur

اسٹیبلشمنٹ سے بات کیلئے شرط یہی ہے کہ حکومت کو گھر بھیجا جائے: مریم نواز

مریم نواز نے کہا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ سے بات کیلئے شرط یہی ہے کہ حکومت کو گھر بھیجا جائے، بات اب عوام کے سامنے ہو گی، چھپ چھپا کر نہیں۔

برطانوی نشریاتی ادارے کو انٹرویو میں لیگی رہنما مریم نواز کا کہنا تھا اسٹیبلشمنٹ کی جانب سے ہمارے قریبی ساتھیوں سے رابطے کیے گئے ہیں، اسٹیبلشمنٹ نے میرے ارد گرد موجود بہت سے لوگوں سے رابطے کیے ہیں، میرے ساتھ براہ راست کسی نے رابطہ نہیں کیا۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ فوج میرا ادارہ ہے، ہم ضرور بات کریں گے لیکن آئین کے دائرہ کار میں رہتے ہوئے اور وہ بات اب عوام کے سامنے ہو گی، چھپ چھپا کر نہیں ہو گی، پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے مذاکرات کے آغاز پر غور کیا جا سکتا ہے  لیکن اس کے لیے شرط ہےکہ جعلی حکومت کو گھر بھیجا جائے۔

بلاول بھٹو کے حالیہ انٹرویو سے متعلق بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ میاں صاحب نے بات بعد میں کی ہے اور ثبوت خود عوام کے سامنے آئے ہیں جب کہ پاکستان پیپلز پارٹی کا ایک اپنا مؤقف ہے، مسلم لیگ ن کا اپنا مؤقف ہے جو میاں صاحب نے واضح کردیا ہے۔

پاکستان مسلم لیگ نون کی رہنما نے مزید کہا عوام سے ڈائیلاگ اتنے اچھے ہو رہے ہیں کہ جعلی حکومت گھبرائی ہوئی ہے، یہ اتنا گھبرائے ہوئے ہیں کہ سمجھ نہیں آ رہی ردعمل کیسے دینا ہے، حکومت گھبراہٹ میں ایسی غلطیاں کر رہی ہے کہ عقل حیران رہ جاتی ہے، مسلم لیگ ن کی سیاست بند گلی کی جانب نہیں جا رہی، بند گلی میں وہ جا رہے ہیں جنہوں نے یہ مصنوعی چیز بنانے کی کوشش کی۔

تعارف Editor

یہ بھی چیک کریں

پیپلزپارٹی نے پی ڈی ایم عہدوں سے استعفے مولانا فضل الرحمن کو بھجوا دیئے

پیپلز پارٹی نے اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم سے علیحدگی کے فیصلے پر مرحلہ وار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے